Jump to content
URDU FUN CLUB

Parvez

Active Members
  • Content Count

    262
  • Joined

  • Last visited

  • Days Won

    6

Parvez last won the day on February 12

Parvez had the most liked content!

Community Reputation

481

1 Follower

Profile Information

  • Gender
    Male

Recent Profile Visitors

1,133 profile views
  1. خوش آمدید امید ہے آپ کو یہ فورم پسند آئے گا. اچھا وقت گزرے گا. ہمیں تو حد سے زیادہ پسند ہے. اگر فورم کا صحیح معنوں میں لطف لینا ہے تو ہوس, پردیس پڑھیں شکریہ
  2. ڈاکٹر صاحب بہت شکریہ.
  3. ڈاکٹر صاحب وقت کے انتہائ پابند ہیں. ان کو س جیسے ہی وقت میسر ہوگا وہ اپڈیٹ دیں گے میں خود بھی اگلی قسط کا شدت سے منتظر ہوں. روحی اور سونیا کے سیکس کا سوچ کر ابھی سے ہی جنسی ہیجان پیدا ہوجاتا ہے. ویسے آج کل بڑا ہی دل کررہا ہے ہا ہا
  4. چند ماہ سے میری مصروفیت کچھ بڑھ گئ ہے تو ایک کمنٹ تک نہیں کر پارہا. سوچ آتی ہے کہ آپ کیسے چیزوں کو وقت دے دیتے ہیں. یہ آپ کا خاصہ ہے. جس طرح اور قارئین آپ کی اپڈیٹ کا شدت سے انتظار کرتے ہیں. میں بھی اتنا ہی کرتا ہوں. بس ذکر نہیں کرتا. کہانی کی قسط تو پڑھ لی کسی طرح وقت نکال کر. آپ نے جس طرح اس قسط کو لکھا ہے یقین مانیں ایک نئ بلندی پر پہنچادیا ہے. سونیا کو رام کرنے کے لوازمات کا آپ نے جس طرح ذکر کیا بہت ہی خوب. بہت سے قارئیں کو اس سے نئ راہیں ملی گیں. یہی تو خاصہ ہے آپ کا کہ مزے کے ساتھ زندگی کے اسرار و رموز بھی سمجھادیتے ہیں. پھدی کی خوشبو واہ لن خواہ مخواہ ہی پھدی لینے سے رہ گیا آج تو اخیر ہی ہوگئ عبیحہ سے پہلے عبیرہ, مہری سے پہلے ماں ضوفی سے پہلے ماہی واہ واہ. یاسر تھوڑا ڈر گیا ہے پیریڈز کی وجہ سے ہا ہا. یاسر کی خود کلامی کے تو کیا ہی کہنے ڈاکٹر صاحب سلام ہے آپ کو
  5. یہ ناول تو ابھی شروع ہوا ہے... مکمل ناول آہنی گرفت ہے. پردیس ہوس چل رہے ہیں.
  6. واہ ڈاکٹر صاحب کیا ہے کہنے. کہانی کو آپ دن بدن دل چسپ بناتے جارہے ہیں. ہر آنے والا نیا موڑ پہلے سے زیادہ پیچ و خم کھا رہا ہے. کڑیوں کو عمدگی سے ملانا آپ ہی کا خاصہ ہے. کرداروں کا سیکس کے ساتھ ساتھ گفتگو کرنا کہانی میں مزید انوکھا پن ڈال دیتا ہے. پھر کردار کی اپنے سے ہم کلامی بہت ہی عمدہ. میں بہت دن غیر حاضر رہا مصروفیت اور صحت کے مسائل کی وجہ سے کہانی تو بہت آگے نکل چکی ہے.... میں ایک چیز کی کمی محسوس کررہا تھا لڑکی کا لڑکی کے ساتھ جو کہ ڈاکٹر صاحب نے فائقہ عبیرہ کے ساتھ پوری کردی. عبیرہ تو چھپی رستم نکلی. ان کا پول تو روحی کی وجہ سے کھلا. ورنہ یاسر تو دور ہئ رہتا. اف کیا سیکس سین تھری سم کا قلم بند کیا ہے کیسے الفاظ لاؤں تعریف کے. فائقہ نے لنڈ پکڑ کر عبیرہ کے اندر ڈال دیا واہ. پھر کچھہ جگہ پر آپ نے چوت کی مختلف چیزوں کا ذکر کیا جس سے بہت سی مفید معلومات حاصل ہوئیں. یاسر اب ایک سلجھا ہوا انسان بن چکا ہے. اب وہ ہر کام تسلی اور پلیننگ کے ساتھ کررہا ہے جس سے اس کو نتائج اچھے مل رہے ہیں.... مس سونیا جیسی سمجھ دار لڑکی کو چھوٹتے چھوٹتے پکڑ ہی لیا. ارسلان کے ساتھ تو صحیح گیم بجائ ہے. روحی اور مس سونیا کے ساتھ سیکس کا شدت سے انتظار ہے. ڈاکٹر صاحب اس اسٹوری کو چلنا چاہییے. ایک کثیر تعداد اس کی منتظر رہتی ہے.. یہ کہانی روز مرہ زندگی کے بہت قریب ہے. آپ کو بہت سا سلام......
  7. واہ ڈاکٹر صاحب میرے سوال کا جواب مل گیا ماروی کے متعلق. ڈاکٹر صاحب براوو, آپ ہر چیز کا خیال رکھتے ہیں. غلام سمیجو کی طرف آپ نے توجہ دلائ. مجھے تو دھیان ہی نہیں تھا
  8. ہممم ڈاکٹر صاحب بہت خوب. آپ نے بڑی چونکا دینے والی صورت حال بنائ جس میں بڑی گہرائ ہے
  9. جی ڈاکٹر صاحب اب یہ بھی سمجھ آگیا کہ ملکہ کو طلاق اس لیے دی تاکہ ماموں بھی زیادتی کا نشانہ بنا سکے... آپ نے بڑی اچھی وجہ بیان کی. کہ اس کے پیچھے بھی وڈیروں کا خوف ہی ہے... ویسے یہ بھی میرے ذہن میں آگیا تھا کہ اپنی بہن ماروی کو بچانے کے لیے انہوں نے یہ ظلم کیا
  10. ہمم ڈاکٹر صاحب بجا فرمایا کہ اگر ماروی قتل ہوتی تو بد کرداری کا داغ لگ جاتا. عین وقت جب کہ ملکہ کو سلام کے نیچے ہونا چاہیے تھاماروی کو نیگ دینے کی وجہ سے رہ گیا. اس کا بھی آپ نے جواب دیا تھا.... بہت بہتر...
  11. اگر سب ہی فری کردیا جائے تو فورم کیسے چلے گا. ڈاکٹر صاحب کا شوق ہے تو وہ لکھ رہے ہیں. ہونا تو یہ چاہیے کہ اچھا بھلا معاوضہ دیا جائے. حالاں کہ ڈاکٹر صاحب جو شاہکار لکھ رہے ہیں معاوضہ اس کی تلافی کر ہی نہیں سکتا. کھپرو کی ملکہ تو بہت ہی پایہ کی کہانی ہے جو فری میں نہیں چلنی چاہیے. ایک کہانی یاسر والی پہلے ہی چل رہی ہے. اب یہی دیکھ لیں کہ ڈاکٹر صاحب نے مجھے کچھ لکھنے کی کوشش کرنےکا کہا ہےلیکن اب تک ایک لائن نہیں لکھی ہے . ٹھیک ہے مصروف ہوں لیکن ڈاکٹر صاحب کیا کم مصروف ہیں. یہ ان ہی کی ہمت ہے یہ نہ ہو کہ قارئین مجھ پر بیچ وتاب کھارہے ہوں تو ان سے معذرت. لیکن دوستوں بات یہ ہے کہ آج کل جس کی تنخواہ بیس ہزار ہے تو اس نے بھی پندرہ بیس ہزار کا موبائل رکھا ہوا ہے. موٹر سائیکل رکھا ہوا ہے تو اس کا بھی پندرہ سو دو ہزار کا خرچہ ہے... جب اتنا کچھ کرلیتے ہیں تو اب تو فورم انتظامیہ نے قیمت بھی بہت کم کردی ہے , اب اتنا مسئلہ نہیں ہونا چاہیے. ایڈمن آپ نے یہ تو طریقہ کار رکھا ہے کہ 100پیجز کی قسط کی قیمت تو یہ بہت ہی بہترین ہے. قارئین کو 100 پیجز یکمشت پڑھنے کو ملیں گے. پھر ہر کہانی کی اپڈیٹ اپنے وقت پر ہوگی جو کہ پہلے بھی ہورہی ہے...... ڈاکٹر صاحب آپ نے ایک جگہ پوچھا تھا کہ کون سی نئ کہانی سلسلہ شروع کیا جائے تو آج کل کے جو حالات چل رہے ہیں کالج یونیورسٹیز. پارک میں بوائے فرینڈ گرل فرینڈ. کالج یونیو رسٹی میں جو کچھ ہوتا ہے . اس پر کوئ سبق آموز کہانی لکھی جائے....
  12. رات کا اندھیرا اس کا ساتھی تھا تو اور تجھ جیسے اسی قابل ہیں کہ تیرے جیسوں کی بیٹیاں مردوں کا پانی سمیٹتی رہیں. تو خود گند ہے اور گند کی پوٹلی بنا کر اپنی بیٹی ان کے سامنے پھینک دی تھی سلام اور زبان سمیحو کی بھی ریڑھ کی ہڈی میں سنسناہٹ سی دوڑ گئ ملکہ کے خوشنما اور حسن کی ساری تعریفوں پہ پورے اترتے پستان باہر کو امڈ پڑے ڈاکٹر صاحب کیا جاندار اور شاندار جملے تحریر کیے ہیں جو سیدھا دل کو چھو جاتے ہیں.. سانول جس طرح جسمانی طور پر پہلوان ہے ویسے ہی اس کا دل بھی شہہ زور ہے. آپ کا کہا بالکل ٹھیک لگا کہ یہ قسط رلا دینے والی ہوگی اور ایسا ہی ہوا. آپ نے سلام ,زمان سمیحو اور ملکہ کے سین کی کمال عکس بندی کی ہے. واہ واہ واہ.. میں یہ بات دوبارہ کہوں گا کہ جو ہم نے سوچا بھی نہیں ہوتا وہی آپ لکھتے ہیں. یہ بڑا اچھا ہوا کہ سلام سمیحو نے ملکہ کو طلاق دیدی. وہ ملکہ کے قابل نہیں تھا. یہ تو تصور میں نہیں تھا کہ اپنی بہن کو اور اپنے آپ کو بچانے کے لیے وہ اس حد تک گر جائے گا. لیکن جو ہورہا ہے وہی لکھا گیا ہے. زمان سمیحو لنڈ دباتا ہی رہ گیا..آپ کا ریپ سین لکھنے کا بھی کوئ جواب نہیں. کچھ سوالات میرے ذہن میں ہیں سانول شکہو ملی کے لیے اتنا بڑا خطرہ کیوں مول رہا ہے جس کا اگر پتا لگ گیا تو موت کی سزا ہوگی. یہ ٹھیک ہے کہ اس کو ظلم پسند نہیں لیکن پلا بڑھا تو وہ اسی ماحول میں ہے. اتنا خطرہ مول لینا کہ ملہی کی بستی میں چلے جانا ؟؟؟؟؟؟؟؟ آپ نے یہ لکھا کہ اگر وہ ماروی کو مارتے ہیں تو برادری میں کیا منہ دکھائیں گے. یہ بات کچھ سمجھ میں نہیں آئ. ہمارے معاشرہ میں اور بالخصوص جس علاقہ کا آپ نے ذکر کیا ہے اس میں تو اپنے دامن بچانے کا واحد طریقہ طریقہ یہی کہ لڑکی کو مار دیا جائے. لوگ یہی کہتے ہیں کہ یہ ہے غیرت والا. ورنہ لوگ بے شرم کہیں گے.... جس وقت ملکہ کے ساتھ دردناک ریپ کی کوشش کی جارہی تھی اس وقت ماروی کہاں تھی وہ بھائ والد چاچا کے لیے کیا محسوس کررہی ہے.... udas panchi نے بھی ایک سوال اٹھایا کہ یہ تو وڈیروں کے ظلم کی داستان ہے تو جو سلام سمیحو زمان نے کیا وہ؟؟؟؟؟؟
  13. اچھا جی. کوئ خاص بات ؟؟؟؟؟
  14. آہ ڈاکٹر صاحب!! آپ کے قلم کی کاٹ کا کوئ جواب نہیں. ماروی کا دردناک ریپ آپ نے جس انداز سے تحریر کیا داد کے مستحق ہیں. خاص طور پر آخری لائن کہ ماروی کے ننگے جسم پر وار کرنے کے لیے ہاتھ بلند کیا ایسا لگا کہ ماروی میرے سامنے موجود ہے. ماروی بہرام کو گھاس نہیں ڈال رہی تھی تو بہرام طیش میں تھا کہ مزہ چکھاؤں گا میں سوچ رہا تھا کہ بہرام ماروی کے ریپ کے وقت موجود ہوگا بعد میں اِسی بات کو لے کر وہ ماروی کے جسم سے کھیلے گا بلیک میل کرے گا لیکن یہاں تو سوچ کے برعکس ہوا. سلام سمیحو شک میں پڑ کر ڈھونڈنے نکل پڑا. اف. ڈاکٹر صاحب جہاں ہماری سوچ ختم ہوتی ہے وہاں سے آپ سوچنا شروع کرتے ہیں. ماروی کا جسم کا جو نقشہ کھینچا ہے وہ بلاشبہ کمال ہے. جس باریک بینی سے ہمارے احساسات کو کاغذ پر لاتے ہیں میں آپ کا تہہ دل سے مشکور ہوں. ایک دو جگہ املا کی غلطی تھی بھوسے کو بوسا لکھا گیا بعد میں دیکھ لیجیے گا کراچی کے ٹھنڈے موسم میں درد بھرا مزہ آیا......
  15. سلام سمیحو کی شب عروسی ہائے کہیں ماروی رنگ میں بھنگ نہ ڈال دے. میں ایسے کسی واقعہ جو کہ پہلی رات کا سیکس ہو شدت سے منتظر تھا اور وہ بھی ڈاکٹر صاحب کے قلم سے. امید بن پڑی ہے کہ پڑھنے کو ملے گا .جس طرح آپ نے ملکہ کے حسن کا نقشہ کھینچا ہے کیا ہے کہنے اس کے. ہونٹ گداز لانبی پلکیں افف. ننگا جسم کیا ہی ہوگا کوئ بڑا مسئلہ نہ ہوجائے مطلب ماروی کی وجہ سے.. صیبی بہت چالاک معلوم ہورہی ہے. اسے کیا معلوم کے فرزانہ پہلے ہی سانول کو دل دے چکی ہے. فرزانہ کا سانول کی سوچ سے شلوار گیلی ہوجانا بتاتا ہے کہ اس کے سانول کے لیے کتنے ہیجان انگیز جذبات ہیں. جب سانول کے نیچے آئے گی تو طوفان مچا دے گی بے چاری کا ویسے ہی گانڈ مروا مروا کر برا حال ہوچکا ہے...... نوشاد تو دوستوں کو بھی لے کر آگیا ہے. ماروی کا بچنا مشکل لگ رہا ہے. کیا معلوم بہرام کل کلاں بلیک میل ہی نہ کرے کیوں کہ وہ سوچ چکا ہے کہ ماروی کو مزہ چکھانا ہے ڈاکٹر صاحب یہی کہوں کہ کمااااااال
×
×
  • Create New...