Jump to content
ALL SEX SECTION WILL CLOSED IN RAMADAN ×
URDU FUN CLUB

airborne

Active Members
  • Content Count

    206
  • Joined

  • Last visited

  • Days Won

    3

airborne last won the day on June 20 2019

airborne had the most liked content!

Community Reputation

267

About airborne

  • Rank
    Junior Member

Profile Information

  • Gender
    Male

Recent Profile Visitors

The recent visitors block is disabled and is not being shown to other users.

  1. ویسے یہ کام دلیری کا ہے۔جو بندہ بندی صرف سوچتے ڈرتے رہ جائیں وہ خود لذّتی سے آگے نہیں بڑھتے
  2. پہلی بات تو یہ ہے کہ اس کا جواب سب سے پہلے آپ کو خود دینا چاہیے تھا۔ یہ بدتہذیبی ہے کہ اس معاملے پر خود کوئی رائے نہ دیں جس پر دوسروں کی رائے لیں رہے ہوں۔ اب آ جاتے ہیں سوال کی جانب۔ تو جناب میرے خیال میں سیکس ایک بہت ہی پرسنل پسند ناپسند کا معاملہ ہے۔ کسی کو کچھ تو کسی کو کچھ پسند ہوتا ہے یہ تو جوڑے پر منحصر ہے کہ اسے پسند ہے کہ نہیں۔ ذاتی طور پر میں مجھے سخت ناپسند ہے۔ اور میری تحقیق کے مطابق اس کو اپنانے والے جوڑے خوش نہیں رہتے۔بلکہ وہ جوڑے ہی نہیں رہتے۔ ہمارے معاشرے میں یہ رجحان ابھی کافی کم ہے مگر وجود رکھتا ہے۔ زیادہ تر ہو یہ رہا ہے کہ مرد بیوی کے علاؤہ بھی کہیں نہ کہیں مزے کر رہا ہوتا ہے۔عورت کو پتہ چلتا ہے تو وہ بھی انتقام کے طور پر اسی راہ پر چل پڑتی ہے۔ اور اتنی دلیر ہو جاتی ہے کہ شوہر کی پرواہ نہ کرتے ہوئے اپنی یاریاں نبھاتی ہے اور مرد اپنے بچوں اور فیملی کی بقاء کی خاطر چشم پوشی کرتا ہے۔پتی دونوں کو ہوتا ہے کہ دوسرا اس ٹایم شاپنگ کے بہانے یا ٹور کے بہانے کیا کرنے جا رہا ہے مگر ایک دوسرے کو برداشت کرتے ہوئے معاملہ نبھایا جاتاہے۔ حتی کہ باہر س کھانا ملنا بند ہو جاتاہے اور گھر کی دال پر گزارا کرنا پرتا ہے
  3. جی بالکل صحیح کہا۔ دراصل مرد حضرات کو اپنی طاقت پر بہت خوش فہمی ہوتی ہے اور دخول کو ہی کامیابی سمجھتے ہیں۔ وہ جنسی طور پر مشتعل ہو کر عورت کے پاس آتے ہیں اور اسے تیار کیے بغیر دخول کرتے ہوئے فارغ ہو کر واپس ہو جاتے ہیں۔ اسی وجہ سے شادی شدہ عورتیں بھی بدکاری کی راہ پر چل پڑتیں ہیں بہرحال سیکس کو ایک گیم کی طرح سمجھ کر اس میں عبور حاصل کرنے کی ضرورت ہے حالانکہ عورت کو بغیر دخول کے بھی مطمئن کیا جا سکتا ہے
  4. پرویز صاحب۔یہ ہوئی نہ بات۔ میں بھی وقت ملتے ہی کچھ واقعات شییر کروں گا
  5. اول خویش بعد درویش جناب من تھوڑا لکھے کو زیادہ جانیے۔ اور پہلے خود آغاز کیجئے۔ کچھ تھریڈ میں جان ڈالیے۔ پھر لوگوں کی انگلیوں کا گلہ کیجیے
  6. جناب بہت اچھا آئیڈیا سوچا ہے۔مگر وہی ڈھاک کے تین پات۔ اصل بات تو لوگوں کی شرکت ہے مگر ہم لوگ تو دو جملوں کا تبصرہ بھی نہیں کرسکتے۔ واقعات کون شئیر کرے گا اپ نے بھی تھریڈ سٹارٹر ہونے کے باوجود اس تھریڈ میں کوئی شیرنگ نہیں کی۔ حالانکہ یہ اصول ہے کہ جو تھریڈ بناتا ہے وہی آغاز بھی کرتا ہے۔ جو جو سوال آپ نے پوچھیں ہیں ان کا جواب تو عنایت فرمائیں؟
  7. کیا انسیسٹ کی اجازت دے دی گئی ہے۔اس فورم پر
  8. ایسی باتوں کا جواب نہیں دیا جاتا۔ آپ بھی توقع نہ کریں۔ تجھے کیا لگتا ہے غالب۔ مجھے تو لگتا ہے مفتے تے مل ماہیا۔
  9. سنا ہے کہ کوئی نیا سیکشن بننے جا رہا ہے۔ جس میں نئے رائیٹر لکھیں گے اور اس ۔ سیکشن کی آمدن بھی ان کو دی جائے گی اس کی تفصیلات تو عنایت فرمائیں
  10. یہ ایک عمدہ اقدام ہے۔ میں اسے بھرپور سراہتا ہوں
  11. tu dear apni zindagi khud banao.Dost banao dosti nabhao.agar aapko achhay dost chahiey.tu pehlay khud achhay dost bano. dosron say shikwa mat karo.learn skill,earn money.life banao.shadi karo.sab tanhai door ho jai ge.
  12. یہ تو لول ہو گیا مطلب مخول سب سمجھا رھے ہیں مگر سمجھنے والا نہ سمجھے تو کیا ہو سکتا ہے بھی کہتے ہیں OLIVE OIL بھائی صہیب زیتون کہ تیل کو
  13. بہتر تو یہی ہے کہ ایک کمائیے اگر نہیں تو ذمہ داری بانٹ لیں اور اپنی زمہ داری میں مدد کے لئے مدد گار رکھ لیں جیسے خانساماں چوکیدار ٹیوٹر
  14. پہلے کمانے کے لئے مردانہ جسم کی ضرورت پڑتی تھی جیسے شکار زراعت تجارت مگر اب صرف ذہن چائیے آج کل کی زندگی میں مرد عورت میں کوئی فرق نہیں رہ گیا جو کام مرد کر سکتا ہے وہ عورت بھی کر سکتی تو اب مرد کو جو رتبہ حاصل تھا وہ ختم ہو چکا ہے
×
×
  • Create New...