Jump to content
URDU FUN CLUB
Please Note ! UFC Site Move to New Hosting Server , Service Maybe disabled Some Days , Will be Back Soon as Possible
Sign in to follow this  
Guru Samrat

حاملہ‘مرد کو طلاق کا حق دینے سے انکار

Recommended Posts

امریکی ریاست ایریزونا کی ایک عدالت نے تین بچوں کو جنم دینے والے ایک ’ٹرانس جینڈر‘ مرد کی جانب سے طلاق کی درخواست مسترد کر دی ہے۔


130330061823_court_refuses_pregnant_man_



جج  کا کہنا ہے کہ اس بات کے کافی ثبوت نہیں ہیں کہ تھامس بِیٹي کی جب شادی  ہوئی تو وہ مرد تھے۔ اس امریکی ریاست میں ہم جنس افراد کی شادی پر پابندی  ہے۔

کئی دہائیوں تک مرد کے طور پر رہنے والے بِیٹي نے 2008 میں سب سے پہلی بار ایک بیٹی کو جنم دیا اور وہ کل تین بار حاملہ ہوئے۔

وہ قانونی طور پر مرد ہیں لیکن انہوں نے اپنے زنانہ تولیدی اعضاء کے ذریعے بچوں کو جنم دیا کیونکہ ان کی اہلیہ بانجھ تھیں۔

تھامس بِیٹي کے ترجمان کا کہنا ہے کہ جج کے فیصلے سے انہیں دھچکا لگا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ان کا موکل اپنی گرل فرینڈ سے شادی کرنا چاہتا ہے اس لیے انہوں نے عدالتی حکم کے خلاف اپیل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

ترجمان کے مطابق ’بدقسمتی کی بات یہ ہے کہ یہاں جج نے کسی دوسری ریاست میں ہونے والی شادی کو تسلیم نہیں کیا۔‘

اپنے عدالتی فرمان میں جج نے لکھا کہ یہ جوڑا ثابت نہیں کر پایا کہ جب بِیٹي کی شادی ہو رہی تھی تب وہ ایک مرد تھے۔

انہوں نے لکھا ’یہ فیصلہ اس نتیجے پر مبنی نہیں ہے کہ اس جوڑے میں سے ایک  ٹرانس جینڈر مرد ہے اور اس وجہ سے یہ معاملہ ہم جنس شادی سے جڑ گیا ہے۔‘

تھامس بِیٹي نے 1979 میں ٹیسٹوسٹرون نامی ہارمون استعمال کرنے شروع کیے تھے اور 2008 میں ان کی چھاتی کا دو بار آپریشن ہوا تھا۔

اسی وقت ان کے پیدائشی سرٹیفکیٹ کو تبدیل کر کے ان کی جنس مرد کر دی گئی  تھی۔ بِیٹي اور ان کی بیوی نینسی نے ایک سال بعد ہوائی میں شادی کر لی تھی۔

تھامس بِیٹی کے ترجمان کا کہنا ہے کہ 39 سالہ بِیٹي نے ایک مرد کے طور پر  قانونی شادی کی اور جب انہوں نے ہوائی میں ایک مرد کے طور پر پیدائش کا  سرٹیفکیٹ حاصل کرنے کے لیے درخواست دی تو انہیں یہ وضاحت کرنے کی ضرورت بھی  نہیں تھی کہ ان کے پاس زنانہ اعضائے تولید ہیں۔

جب بِیٹي کو یہ پتہ چلا کہ ان کی بیوی ماں نہیں بن سکتی تو انہوں نے ٹیسٹوسٹرون کا استعمال روک دیا تاکہ وہ اپنے بچے کو جنم دے سکیں۔

وہیں نینسی بِیٹي کے وکیل نے کہا کہ جج کا فیصلہ مکمل تھا لیکن یہ وہ ایسا فیصلہ نہیں تھا جس کی توقع ان کی بیوی کر رہی تھیں۔

Share this post


Link to post
Share on other sites

اردو فن کلب کے پریمیم ممبرز کے لیئے ایک لاجواب تصاویری کہانی ۔۔۔۔۔ایک ہینڈسم اور خوبصورت لڑکے کی کہانی۔۔۔۔۔جو کالج کی ہر حسین لڑکی سے اپنی  ہوس  کے لیئے دوستی کرنے میں ماہر تھا  ۔۔۔۔۔کالج گرلز  چاہ کر بھی اس سےنہیں بچ پاتی تھیں۔۔۔۔۔اپنی ہوس کے بعد وہ ان لڑکیوں کی سیکس سٹوری لکھتا اور کالج میں ٖفخریہ پھیلا دیتا ۔۔۔۔کیوں ؟  ۔۔۔۔۔اسی عادت کی وجہ سے سب اس سے دور بھاگتی تھیں۔۔۔۔۔ سینکڑوں صفحات پر مشتمل ڈاکٹر فیصل خان کی اب تک لکھی گئی تمام تصاویری کہانیوں میں سب سے طویل کہانی ۔۔۔۔۔کامران اور ہیڈ مسٹریس۔۔۔اردو فن کلب کے پریمیم کلب میں شامل کر دی گئی ہے۔

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now
Sign in to follow this  

×
×
  • Create New...